کیا یہ ممکن ہے کہ اپنی زندگی داؤ پر لگا دی جائے؟

سنگین نتائج - معقول مشورہ

کیا آپ کسی ایسے فرد کو جانتے ہیں جو بہت جوا کھیلتا ہے؟

جوا کھیلنے کے مسائل اکثر شرم، ایک دوہری زندگی گزارنے اور جھوٹ کے احساس سے منسلک ہوتے ہیں۔ اس وجہ سے بہت سے عزیز و اقارب کو مسئلے کے وجود کا پتہ اسی وقت چلتا ہے جب بہت سارا وقت گزر چکا ہوتا ہے۔ اس کے بہت سے سلسلہ وار اثرات ہوتے ہیں، اور پھر مسئلے پر قابو پانا مشکل ہو جاتا ہے۔

شاید آپ کو ایک شک اس وقت گزرتا ہے جب گھر کے بجٹ میں اضافہ نہیں ہوتا؛ جب کوئی شرط بازی کے خیال کا بہت زیادہ مشتاق ہوتا ہے یا جب کہانیاں بے ربط ہوتی ہیں۔ شاید آپ طرزِ عمل یا روئیے میں کوئی تبدیلی دیکھ رہے ہیں؟

48,000 عادی جواریوں میں سے ہر ایک کے لیے اکثر آٹھ اور 10 کے درمیان عزیز و اقارب ہوتے ہیں جو متاثر ہوتے ہیں۔ مزید 84,000 لوگ ہیں جنہیں اپنی جوئے کی عادت پر قابو پانے کے مسائل ہیں۔ اگر ان جواریوں کا بھی قابو نہیں رہتا تو مزید لوگ بھی شدید متاثر ہوں گے۔

ان وجوہات کی بناء پر یہ اہم ہے کہ جوئے کے مسائل اور عادت کو روکا اور اس پر قابو پایا جائے۔

عزیز و اقارب کے لیے مشورہ

عزیز و اقارب کے لیے فولڈر ڈاؤن لوڈ کریں

ایک رشتہ دار وضاحت کرتا ہے

اس بارے میں بات کریں

جوئے کی لت کے بارے میں ایک امام کی گفتگو

اس مرحلے پر جب کوئی پہلے ہی جوئے کی طرف بھرپور جھکاؤ محسوس کرتا ہو کچھ نہ کچھ کرنا ایک اچھی تجویز ہے۔ اس سے پہلے کہ مسائل بڑھنا شروع ہو جائیں۔ اس سے پہلے کہ نتائج سنگین ہو جائیں۔ شاید اس سے پہلے کہ جواری خود احساس کریں کہ انہیں مسئلہ درپیش ہے۔

زیادہ تر لوگ اپنی جوئے کی عادت پر دوبارہ قابو پا سکتے ہیں اور اپنی زندگیاں واپس لے سکتے ہیں۔ ہمیں معلوم ہے کہ اس بارے میں بات کرنا مدد کرتا ہے۔ حل مدد کے ذریعے نکلتا ہے۔ لہٰذا، اگرچہ یہ مشکل ہے، لیکن اس بارے میں کسی کے ساتھ بات کریں: خواہ اہلِ خانہ، دوستوں، اپنے ڈاکٹر یا امام سے بات کریں۔

علاج جوئے کی لت پر قابو پانے میں مدد کرتا ہے

60 % دوبارہ مکمل قابو پا لیتے ہیں*

30 % کو دوبارہ مبتلا ہونے کا کم خطرہ ہوتا ہے*

10 % کو مزید مدد کی ضرورت ہوتی ہے*

68 % لوگ صرف اس وقت مدد مانگتے ہیں جب انہیں مسئلے میں پھنسے چار سال سے زائد ہو چکے ہوتے ہیں*

وقت جتنا گزرتا جاتا ہے، مسئلہ اتنا ہی سنگین ہوتا جاتا ہے۔ کسی کے لیے اپنے جوا بازی کے مسئلے پر اکیلے قابو پانا بہت مشکل ہو سکتا ہے۔ زیادہ تر لوگوں کو معاونت کی ضرورت ہوتی ہے اور بہت سوں کو پیشہ ورانہ مدد بھی درکار ہوتی ہے۔

ہمیں امید ہے کہ اس ممنوعہ چیز کو چھوڑنے اور جوئے کی لت کو ترک کرنے کے لیے آپ کو ضروری ہمت اور علم ملے گا۔

*CfL کے کلائینٹ ڈیٹا پر مبنی

مشورہ اور علاج تلاش کریں

مرکز برائے لیودومانی (CFL= جوئے کی عادت کے لیے مرکز) عادی جواریوں اور ان کے عزیز و اقارب کو مفت پیشہ ورانہ مدد کی پیشکش کرتا ہے۔

ہم لوگوں کی ان کے جوا کھیلنے کی عادت پر قابو پانے اور اپنی زندگیاں واپس حاصل کرنے میں مدد کرتے ہیں۔

علاج کا کورس 10 الگ الگ ملاقاتوں پر مشتمل ہے۔ ایک تھیراپسٹ کورس سے منسلک ہے اور ہر ملاقات 45 منٹوں کی ہوتی ہے۔ ایک کورس کو رہائشی قیام کے ساتھ اکٹھا کرنا بھی ممکن ہے۔

رازداری مرکز پر موجود ہر فرد کا فرض ہے اور تمام استفسارات صیغۂ راز میں ہوتے ہیں۔

ایک وقتِ ملاقات طے کرنے کے لیے یا اگر آپ ایک مشورہ چاہیں، تو ہمیں ابھی 10 18 11 70 پر کال کریں۔

مشورہ اور علاج تلاش کریں

"مجھے زندگی واپس مل گئی۔"

سابق جواری

"میں نے جوئے کی لت کے لیے جانچ کروائی اور ایسی بہت سی چیزیں پتہ چلیں جو بہت جانی پہچانی لگیں۔ یہ ایک فیصلہ کن موڑ تھا۔ اب میں بمشکل ہی کبھی شرط لگاتا ہوں"۔

- عادت پر قابو پانے والا جواری